بابری مسجد کی شہادت پر ممبئی میں یوم سیاہ , پولس الرٹ جاری

ممبئی 2 دسمبر ممبئی شہر و مضافات میں چھ دسمبر کے پیش نظر  پولس نے ریڈالرٹ جاری کیا ہے دوسری طرف مسلم تنظیموں نے یہاں بابری مسجد کی شہادت کی برسی پر یوم سیاہ اوراذان دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔بابری مسجد کی شہادت 6 دسمبر 1992کو باقاعدہ طور پر یوم شہادت منایا جائے بابری مسجد کی ملکیت پر رام مندر کی تعمیر اور سنگ بنیاد کے بعد بھی رضااکیڈمی نے یہ واضح کیا ہے کہ وہ بابری مسجد کے قضیہ کے بعد بھی وہاں تاقیامت تک مسجد ہی مانتے ہیں کیونکہ عرش سے لے کر فرش تک یہ جگہ مسجد ہی رہے گی اس کا کوئی بدل نہیں ہے اس لئے مسلمانوں کا عقیدہ او ر ایمان ہے کہ جس جگہ پر مسجد قائم ہو وہ تاقیامت تک مسجد ہی رہےگی اس لئے برسہا برس سے یوم شہادت پر رضااکیڈمی مسجد کی بازیافت اور اس کی آزادی کے لئے دعا کرتی ہے یہ سلسلہ آئندہ بھی جاری ہے گا ۔ رضا اکیڈمی کے روح رواں الحاج سعید نوری نے کہا کہ بابری مسجد کی یوم شہادت پر باقاعدگی سے بطور احتجاج یوم سیاہ منایا جاتا ہے یہ ملک کی تاریخ پر بدنما داغ ہے کہ ایک مسجد کو دن دہاڑے کارسیوکوں اورغنڈوں نے شہید کر دیا اور فیصلہ بھی خلاف توقع ہی آیا ہے اسلئے مسلمان یہ مانتا ہے کہ آج بھی یہاں بابری مسجد ہی ہے اور یہ ملکیت تاقیامت بابری مسجد ہی رہے گی اس لئے مسجد کی بازیابی کے لئے چھ دسمبر کو دعا اور اذانیں دی جائے گی انہوں نے کہا کہ کھتری مسجد ۔ مینارہ مسجد ۔ نواب ایاز مسجد سمیت ممبئی ہی نہیں ملک میں سہ پہر 3:45 منٹ کو باقاعدہ طور پر اذان دی جائے گی اور یوم سیاہ بھی منایا جائے گاانہوں نے کہا کہ یہ سلسلہ جب تک جاری رہے گا جب تک بابری مسجد کی بازیافت نہیں ہو جاتی کیونکہ مسلمان کے لئے آج بھی اس جگہ مسجد ہی ہے ایسی صورتحال میں مسلمان یوم سیاہ کے طور پر چھ دسمبر مناتے ہیں اور اذان کا بھی انقعادکرتے ہیں  ۔           (یو این آئی )

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔