مولانا وحید الدین خان کی زندگی معرفت خدا, امن اور روحانیت سے عبارت تھی:القرآن اکیڈمی میں تعزیتی میٹنگ

کيرانه، 22 اپریل  معروف عالم دین مولانا وحید الدین خان کی وفات کے موقع پر آج القرآن اکیڈمی کيرانه میں ایک تعزیتی میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔اس موقع پر میٹنگ سے خطاب کرتے ہوۓ مفتی اطہر شمسی ڈائریکٹر القرآن اکیڈمی نے کہا کہ بلا شبہ مولانا مرحوم ایک نابغہ روزگار شخصیت تھے۔مولانا کی تمام زندگی معرفت خدا اور امن و روحانیت سے عبارت تھی۔ مفتی اطہر شمسی نے کہا کہ مولانا موصوف سے اگرچہ ان کو بے شمار اختلافات تھے مگر حقیقت یہی ہے کہ جس شخصیت سے اُنھوں نے تعصب سے آزاد ہو کر سوچنے کا فن سیکھا وہ مولانا وحید الدین خان تھے۔ مولانا محسن قاسمی نے کہا کہ مولانا موصوف گہری دینی فہم و بصیرت کے حامل تھے۔
مولانا محسن قاسمی نے کہا کہ مولانا موصوف کا اصل کارنامہ یہ ہے کہ وہ دین سے دور بھٹکتی نسل نو کو دین کے قریب لائے اور اُنہیں اپنے دین پر ایقان عطا کیا۔مولانا عابد حسن نے بتایا کہ مولانا وحید الدین خان مرحوم کی کتاب مذہب اور جدید چیلنج دنیا کی نصف درجن سے زائد یونیورسٹیوں میں داخل نصاب ہے۔محمد معاذ نے اِس موقع پر مولانا کی آخری وصیت کو پڑھ کر سنایا۔
خاور صدیقی نے بتایاکہ مولانا وحید الدین خان مرحوم نے اسلام کی تعبیر و تشریح سے متعلق دو سو سے زائد کتابیں لکھیں ہیں۔پروگرام کی نظامت حبیبہ شمسی نے کی۔

(یو این آئی)