تلنگانہ کے بے روزگار نوجوانوں کا دفتر پبلک سرویس کمیشن پر دھرنا

حیدرآباد20اپریلریاست میں خالی ملازمتوں کو پُرکرنے سمیت اسسٹنٹ اسٹاٹسٹکس آفیسرس کے امتحانات کے نتائج فوری جاری کرنے کامطالبہ کرتے ہوئے تلنگانہ کے بے روزگاروں کی متحدہ مجلس عمل کی جانب سے آج شہر حیدرآباد میں دفتر پبلک سروس کمیشن کے روبرودھرنادیاگیا۔نیشنل بیک ورڈ کلاسس ویلفیر ایسوسی ایشن کے صدرنشین آر کرشنیا کی قیادت میں بے روزگاروں کی بڑی تعداد نے یہ احتجاج کیا۔انہوں نے ریاست میں خالی ایک لاکھ 93ہزار ملازمتوں کو پُرکرنے پر زور دیا۔انہوں نے ساتھ ہی جلد ہی تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کے صدرنشن اور دیگر ارکان کو مقرر کرنے کی بھی خواہش کی۔اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے آرکرشنیا نے کہا کہ تین برسوں سے کئی ملازمتیں خالی ہیں اور حکومت نے ان کو پُرنہیں کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ کئی ملازمتوں پر بھرتی پر قبل ازیں ہائی کورٹ نے روک لگادی تھی تاہم جاریہ سال فروری میں یہ روک بھی ختم کردی گئی اور اس طرح ان ملازمتوں پر تقرری کی راہ ہموار ہوگئی تاہم حکومت کی جانب سے ان ملازمتوں پر بھرتی نہیں کی گئی ہے جو افسوسناک بات ہے۔وزیراعلی نے 50ہزارملازمتوں کو پُرکرنے کا اعلان کیا تھا تاہم انہوں نے کہا کہ ایک ایسے وقت جب پبلک سرویس کمیشن کے صدرنشین اور ارکان نہیں ہیں کس طرح ان ملازمتوں کو پُر کیاجائے گا۔ان بے روزگار نوجوانوں نے اپنے مطالبہ کی حمایت میں نعرے بازی بھی کی اور حکومت پر زور دیا کہ ان کے مطالبہ کی فوری تکمیل کرتے ہوئے نوجوانوں کو روزگار فراہم کیاجائے۔

(یواین آئی)