پرمبیر سنگھ کی عرضی پر شنوائی سے سپریم کورٹ کا انکار

نئی دہلی، 24 مارچ (یو این آئی) سپریم کورٹ نے بدھ کے روز مہاراشٹر کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ کے خلاف بد عنوانی کے الزامات کی تفتیش کی بابت ممبئی پولیس کے سابق کمشنر پرمبیر سنگھ کی عرضی پر شنوائی سے انکار کر دیا۔
جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس آر سبھاش ریڈی کی بینچ نے سابق پولیس کمشنر کو بامبے ہائی کورٹ جانے کی صلاح دی۔
شنوائی کے دوران بینچ نے سوال کھڑے کیے کہ آخر عرضی گذار بامبے ہائی کورٹ میں آئین کی دفعہ 226 کے تحت عرضی دائر کرنے کے بجائے دفعہ 32 کے تحت سپریم کورٹ میں عرضی دائر کرنے کا فیصلہ کیوں کیا؟ عدالت نے یہ بھی پوچھا کہ آخر کار انہوں نے وزیر داخلہ کو اس میں فریق کیوں نہیں بنایا؟
مسٹر سنگھ کی جانب سے پیش ہونے والے وکیل مکل روہتگی نے عدالت کے سامنے کہا کہ وہ عرضی میں مسٹر دیشمکھ کو فریق بنانے کو تیار ہیں۔ حالانکہ عدالت نے عرضی گذار کو پہلے ہائی کورٹ جانے کی صلاح دی۔
غور طلب ہے کہ مہاراشٹر میں جاری سیاسی گھمسان کے درمیان ممبئی پولیس کے سابق سربراہ مسٹر دیشمکھ کے خلاف بد عنوانی کے الزامات کی تفتیش مرکزی جانچ بیورو (سی بی آئی) سے کروانے اور اپنے تبادلے پر پابندی عائد کرنے کے مطالبے پر سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔