زرعی قوانین سے کسانوں کی زمین خطرے میں: جینت

سہارنپور، 03 مارچراشٹریہ لوک دل (آر ایل ڈی) کے نائب صدر جینت چودھری نے آج کہا کہ ان کے دادا چودھری چرن سنگھ نے کسانوں کو جو زمین کھیتی کے لیے دی تھی‘ وہ ان قوانین کی وجہ سے خطرے میں پڑ گئی ہے۔
پارٹی کی جانب سے نکوڈ میں بلائی گئی مہاپنچایت میں مسٹر چودھری بدھ کے روز مرکز کی مودی حکومت پر جم کر برسے۔ انہوں نے کہا کہ چودھری چرن سنگھ نے کسانوں کو کھیتی کے لیے جو زمین سونپی تھی‘ وہ وزیراعظم نریندر مودی حکومت کی جانب سے بنائے گئے تین مرکزی کالے زرعی قوانین کے سبب خطرے میں پڑ گئی ہے۔ اسے کسان ہر گز قبول نہیں کریں گے۔
انہوں نے کہا کہ مظفر نگر، متھرا، بڈوت، بجنور اور بھینسوال کی مہاپنچایتوں میں کالے قوانین کے خلاف امنڈی کسانوں کے سیلاب نے اپنے ارادے واضح کر دیے ہیں کہ یہ قوانین انھیں ہرگز قبول نہیں ہیں۔ ان کی واپسی تک کسان متحد ہو کر تحریک چلاتے رہیں گے۔
انہوں نے کہا کہ یوگی حکومت اپنی حقوق کی خاطر آواز اٹھانے والے کسانوں کو دبانے اور انھیں پولیس کے ذریعے ڈرانے- دھمکانے میں سرگرم ہے۔ تمام طبقوں کا کسان آج متحد ہو کر اپنی آواز بلند کر رہا ہے۔
کسانوں کو ان قوانین کی واپسی سے کم کچھ بھی منظور نہیں ہے۔