چین کے مسلمان خنزیرکاگوشت کھانے پرمجبور

مکرمی:
ایغورمسلمانوں پرمظالم ومصائب کاجودردناک سلسلہ حکومت چین نے شروع کیاہے،وہ بغیرکسی وقفے کے جاری ہے،وہاں کے مسلمانوں کی اندوہناک حالات کی رپورٹیں حقوق انسانی کی مختلف تنظیموں نے مرتب کی ہیں جوکہ اخبارات میں وقتافوقتاشاءع ہوتی رہی ہیں ،مگربنت مسلم کی عصمت دریوں اورکیمپوں کے مناظرپرمشتمل یہ رپورٹیں بھی عالم اسلا م کاضمیرنہ جگاسکیں ۔ چینی مسلمانوں کوجانوروں سے بدترحالات کاسامناہے،لاکھوں کی تعداد میں مسلمان حراستی تعداد میں بندہیں ،کسی کوخنزیرکاگوشت کھلایا جارہا ہے تو کوئی شراب پینے پرمجبورہے ۔ ایک بارپھر چین کے ایغورمسلمانوں کے تعلق سے یہ روح فرساخبرسامنے آرہی ہے کہ ’’ری ایجوکیشن کیمپوں ‘‘ میں مقیدمسلمانوں کوہرجمعہ کو خنزیرکاگوشت کھلایاجاتاہے،اورنہ کھانے پرسخت سزادیجاتی ہے ۔ اسلامی ممالک کے حکمراں صم ،بکم ،عمی (گونگے بہرے اندھے )کاعملی نمونہ بنے ہوئے ہیں ،عالم اسلام کے بہی خواہان کی جانب سے انہیں جھنجھوڑاجارہاہے اوران کے خاکستر میں دبی ہوئی چنگاریوں کوفروزاں کرنے اوران کی غیر ت کوبیدارکرنے کی کوشش کی جارہی ہے ،اوراسلام کادرد رکھنے والے حلقوں پرچھائی ہوئی خاموشی کوللکاراجارہاہے ۔ آج بھی چین کے مسلمانوں کاغم دنیادیکھ رہی ہے اورعالم اسلام خاموش تماشائی بناہواہے ۔ حد تویہ ہے کہ سال گزشتہ محمد بن سلمان نے دورہ چین میں ایغورمسلمانوں کواعتدال پسندی کے درس کے لئے حراستی کیمپوں میں رکھے جانے کی تائید کی تھی، مملکت سعودیہ کے حکمراں کایہ نظارہ کس قدراذیت ناک ہے ۔ یہ بھی دنیاپرعیاں ہوچکاہے کہ اقوام متحدہ میں بھی ایغورمسلمانوں کو’ری ایجوکیشن کیمپ‘ میں رکھے جانے پرسوال اٹھایاجاچکاہے کہ چین میں مسلمانوں پرظلم ہورہاہے،لیکن مسلم ممالک کی طر ف سے کوئی جواب نہیں آتا ،جب کہ حقوق انسانی پامال ہورہے ہیں اتناسب کچھ ہونے کے باوجود اسلامی ممالک مردانگی کے بجائے مردہ ہونے کاثبوت دے رہے ہیں اورنیوکلیرپاورپاکستان بھی چین کی اس حرکت پرپوری طرح خاموش ہے کیونکہ وہ اس کادیرینہ دوست ہے ،اوراس کی تومعیشت ہی چین کے سہارے چل رہی ہے،عالم اسلام میں مسلمانوں کی نسل کشی پراس طرح خاموشی کوئی نئی بات نہیں ہے،جب کہ چین کے(صوبہ) سنکیانگ میں مسلمانوں کے ساتھ جوکچھ ہورہاہے وہ سب دنیاکے سامنے ہے ،رمضان میں روزوں پرپابندی ،بچوں کے مسجد جانے ،سلام کرنے اورخداحافظ کہنے پربھی پابندی ہے ۔ مگران سب مظالم سے بڑاظلم یہ ہے کہ اسلامی ممالک ہمیشہ کی طر ح خاموش ہیں ،اس سے پہلے بھی چین کے تعلق سے سوشل میڈیاپر ایک ویڈیاوائرل ہوئی کہ چین میں قائم انڈسٹریز میں خنزیرکی ہڈیوں سے تسبیح تیارکرکے دنیابھر میں ایکسپورٹ کی جارہی ہے، جس میں خنزیرکی ہڈی کے نکالے جانے سے تسبیح بنائے جانے کے تمام مراحل تک کو دکھایاگیا ہے ۔ جہاں سے دنیابھرکے عازمین حج وعمرہ تسبیحات خرید کرعزیز اقار ب کوتحفہ میں دیتے ہیں ۔ طوفان کی طرح امڈنے والے قوم مسلم کے وہ جذبات آندھی کی طرح گزرکرکہاں غائب ہوگئے;238; ہرسمت چھائی ہوئی یہ اذیت ناک خاموشی کب دم توڑے گی،غفلت کے تنے دبیز پردوں میں احساس کے روزن کب کھلیں گے ;238;بے بس رات کے اندھیرے کب چھٹیں گے;238;ان ولولوں ،ان جذبوں اوران صداءوں کاموسم کب گر م ہوگا;238;مگریادرہے کہ ظلم کاتیشہ ہمیشہ مظلوم کے پاءو پرنہیں چلتا ایک وقت کے بعد قدرت کاہاتھ حرکت میں آتاہے تواس کا انتقامی رخ ظالم کی طرف مڑتاہے ۔

قاری غیاث الدین منصوری دھامپوری (بجنور)

محلہ بندوقچیان دھام پور