بی جے پی سے ڈرنے کی ضرورت نہیں, کسی کی شہریت نہیں جائیگی :ممتا بنرجی کا متوا ءوں سے وعدہ

انتحابی بگل کی پکار دیتے ہوئے کہ اگر بی جے پی فساد کرانے کی کوشش کریں تو ماں بہن ہی اس سے نپٹ لیں ،سی بی آئی ای سے بی جے پی کسی کو ڈرا نہیں سکتی ، ہماری سرکار کے ترقی یافتہ کام پر لوگ ترنمول کو ووٹ دیں گے :ممتا بنرجی
ندیا ۔ 11جنوری(آفرین حسین/سارتھک داس گپتا) رانا گھاٹ کے چھتم تلہ میدان میں وزیر اعلی ممتا بنرجی نے عوامی میٹنگ میں سبھو کو یقین دلا یا کہ جو متوا لوگ یہاں پر 50برسوں سے رہ رہے ہیں ان کی شہریت کبھی ختم نہیں ہو سکتی ہے اور بی جے پی سرکار کی باتوں سے ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے ، یہاں ہماری سرکاری ترنمول سرکا ر کے رہتے کبھی نہ این سی آر ، سی اے اے نہ کبھی این پی آر کی ضرورت پڑیگی ۔ جو بنگال کی مٹی سے ہم لوگوں کو باہر نکالنے کی بات کہہ رہے ہیں ہم لوگ انھیوں کو دھکہ مار کر یہاں سے نکال دیں گے ۔ یہاں کے لوگوں کا زمین کا پٹہ جو باقی ہے وہ جلد ہی ان کو سونپ دیا جائیگا ۔ بی جے پی سرکار لو گوں کو سی بی آئی ، ای ڈی کے نام پر ڈرا رہی ہے او رکہہ رہی ہے کہ اگر اپنا کالا روپیہ سفید کرنا ہے تو بی جے پی میں شمولیت حاصل کر لو ، ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے آپ کو آپ کا کچھ بھی بی جے پی بگاڑ نہیں سکتی ہے ، اسے مندر مسجد کے نام پر تقسیم کرنے کے علاوہ کچھ نہیں آتاہے ، لیکن بنگال میں سب ہی بیدار ہیں ، میں تو بلکہ اپنی ماں بہنوں سے گزارش کرونگی کہ بی جے پی اگر فساد برپا کرنے کی کوشش کرے تو آپ سکون والی خاتون ہی اپنے باورچی خانہ میں استعمال ہونے والی چیزوں کو ہی اپنا ہتھیار بنا لیں ڈریں نہیں ، ہاں ووٹ سے ان کو ہرا کر دکھا دیں کہ بنگال کسی طرح کا ظلم نہیں سہتاہے ۔ ممتا بنرجی نے مزید کہاکہ بی جے پی بنگال میں کوئی ترقی یافتہ کام نہ ہونے کی دوہائی دیکر اقتدا ر میں آنے کی بات کہہ رہی ہے ، دراصل وہ یہاں بنگال میں صدارتی حکومت ، تانہ شاہی بیٹھا نا چاہ رہی ہے ، بنگال میں ہم نے شکشا شری ، روپا شری ، سواتھ ساتھی ،مفت صحت ، مفت ساءکل طالب علموں کو دیا ہے ، کسانوں کے ساتھ ہیں ہم لیکن مرکز ان کا کوئی خیال نہیں کر رہی ہے وہ جان تک گنوا رہے ہیں ، میں نے کسانوں کے لئے نندی گرام میں ، سنگور میں تحریک چلا ئی ہے ان کے لئے خون کے آنسوءوں بہایا ہے ان کا درد میں جانتی ہیں ، اب یہ مرکز تو ان کی پیدا کی گئی فصل کا فائدہ صنعت کاروں کو دینا چاہ رہی ہے یہ کیا بنگال کو سونا ر بنگلہ بنانے کا دعوی کر رہے ہیں ، یہ پہلے دہلی تو ٹھیک سے سمبھال لیں پھر بنگال کی بات سوچیں ۔ میں دکھاوا نہیں کرتی ہوں مقامی ہی پانی پیتی ہوں لیکن یہ مرکز کے لوگ امیت شاہ کا نام لئے بغیر انھوں نے تنقیدی زبان میں کہا جب آتے ہیں تو اپنے ساتھ ہی ہیمالین واٹر لے کر آتے ہیں ،پائیو اسٹار ہوٹلوں میں ٹھہرتے ہیں ان میں لوگوں کے لئے کتنا درد ہے کہ بنگال کی عوام اچھے سے سمجھتی ہے ، ان کا سب خواب 2021 میں اقتدار میں دھرا رہ جائیگا کیوں کہ ان کو نہ متوا کا ووٹ ملیگا ، نہ اقلیت کا ووٹ ملیگا ، نہ ہی ہندو ان کا ووٹ دیں نہ ہی مسلمان ، نہ ہی کوئی اور ووٹ دیں گے ۔ بی جے پی اب ڈسبن ہو گئی ہے ،واشنگ پاءوڈر کی طرح دھل گئی ہے ۔ ہماری سرکار نے مہاجرمزدوروں کو روزگار فراہم کیا مرکز نے تو ان کے لئے ریلوے ٹکٹ تک فراہم نہیں کیا وہ تو ہم نے ان کے آنے کا ٹرین سے آنے کا مفت انتظام کروایا ۔ عوام سے پوچھا کہ بتائے تو نریندر مودی سرکار نے جو 15لاکھ روپیئے لوگوں کے اکاءونٹ میں بھیجنے کا وعدہ کیا تھا کسی کو ملا ہے سب ہی ہاتھ ہلا کر نہیں کرنے لگے ۔ ہم تو طالب علموں کو ٹیب کا روپیہ دے رہے ہیں ، پڑھنے کے لئے بھی روپیہ دے رہے ہیں ۔ آج ندیا کے رانا گھاٹ کے چھتم تلہ میدان میں وزیر اعلی ممتا بنرجی کی میٹنگ ہوئی ۔ یہ میدان قومی شاہراہ 34کے قریب ہے ۔ جب ہم لوگ چھتم تلہ پہنچے تو وہاں الگ الگ قسم کے پوسٹر لگے ہوئے تھے ، کسی میں ممتا بنرجی کی بڑی سی تصویر میں لکھا تھا کہ ماں تمہارا ہاتھ ہم کبھی نہیں چھوڑیں گے ،جس کو چھوڑنا ہے وہ چھوڑے بھلے ہی تو کسی اور پوسٹر میں ممتا کی تصویر کے ساتھ لکھا تھا کہ ممتا دیدی ہم لوگ آپ کے ساتھ ہیں ۔ اس طرح کے کئی پوسٹر لگے ہوئے تھے ۔ ہر مقام پر ممتا ہی ممتا کا بول بالا نظر آرہا تھا ۔ ممتا کو آنے میں تو دیر تھی لیکن ایم پی مہوا متر تنہا ہی منچ سے اپنی بات کہہ رہی تھیں ، وزیر اجول بسواس نے بھی اپنی باتیں کہیں ، ندیارانا گھاٹ کے لوک سبھا کے ماتحت سات اسمبلی سیٹیں ہیں ان میں سے دو پر رانا گھاٹ اور بن گاءوں پر بی جے پی کا قبضہ ہے ۔ ترنمول کے جتنے بھی ایم ایل اے ہیں سبھی کو بیشتر اس پروگرام میں دیکھا گیا جن میں کریم پور کے ایم اےل اے ، کلیانی کے ایم ایل اے ، ایم ایل اے نیلیما ناگ شامل ہوئے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔