ممتا بنرجی نے پی ایم کسان اسکیم کو راہ دے دی بی جے پی کے پاءوں سے زمین نکل گئی

مرکزی حکومت وزیر اعلیٰ مغربی بنگال ممتا بنرجی کو نیچا دکھانے کیلئے کسی بھی حد تک جانے کیلئے تیار رہتی ہے ۔ پی ایم کسان اسکیم کی آڑ میں اس نے ممتا بنرجی کو کسان دشمن ثابت کرنے کی بہتیری کوششیں کیں ۔
اس اسکیم سے استفادہ کیلئے ریاست کے 21;46;79لاکھ کسانوں نے سنٹرل پورٹل پر خود کو رجسٹرکرایا تھا ۔ وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی چاہتی تھیں کہ اس اسکیم کے تحت رقم ریاستی حکومت کے خزانے میں ٹرانسفر کردی جائے اور ریاستی حکومت باضابطہ تحقیق کرکے یہ رقم کسانوں تک پہنچائے لیکن مرکز کو یہ تجویز پسندنہیں آئی اور اس نے فنڈ روکے رکھا ۔ کسانوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے ممتا بنرجی نے ایک قدم پیچھے ہٹتے ہوئے اب مرکزی اسکیم کو نافذ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔ انہوں نے مرکز کو لکھا ہے کہ وہ ان کسانوں کی تفصیلات پیش کرے تا کہ وہ اس کی تصدیق کرسکیں اور کسانوں کے بینک اکاءونٹ میں رقوم جمع ہوجائیں ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم نے بار بار مرکز سے کہا کہ پی ایم کسان اسکیم کے تحت وہ فنڈ ٹرانسفر کردے تاکہ ریاستی حکومت یہ فنڈ کسانوں کو مہیا کردے ،لیکن مرکزی حکومت نہ مانی اور اپنے موقف پر قائم رہی کہ وہ کسانوں کے اکاءونٹ میں راست رقم ٹرانسفر کرے گی ۔ ممتا نے کہا کہ وہ اس سیاست کو خوب سمجھتی ہیں لیکن چونکہ کسانوں کا مفاد انہیں بے حد عزیز ہے اس لئے طوعاً کرہاً وہ مرکز کی بات تسلیم کررہی ہیں ۔ انہوں نے مرکز سے کسانوں سے متعلق اعدادو شمار طلب کئے ہیں تاکہ اس کی تصدیق ہوسکے ۔ ممتا نے کہا کہ وہ چاہتی ہیں کہ کسانوں کو ہر طرح سے مدد ملے ،ماسوا اس کے جو ریاستی حکومت انہیں فراہم کررہی ہے ۔ واضح ہوکہ مرکزی فنڈ صرف ان کسانوں کیلئے ہے جن کے پاس دو ایکڑ زمین ہے ۔ ممتا بنرجی نے یہ بھی کہا کہ وہ ہر حال میں کسانوں کے ساتھ ہیں اور اسی لئے تےن زرعی قوانین کو واپس لینے کا مطالبہ کررہی ہیں ۔
واضح ہوکہ ممتا بنرجی نے مرکزی اسکیم کی اس لئے مخالفت کی تھی کیوں کہ اس سے تمام کسانوں کو فائدہ نہیں پہنچ رہا تھا جب کہ ریاستی حکومت کی اسکیم کرشک بندھو سے زیادہ سے زیادہ کسان مستفید ہورہے تھے ۔ کرشک بندھو اسکیم کے تحت کسانوں کو سالانہ پانچ ہزار کی رقم فراہم کی جارہی تھی ۔ علاوہ ازیں کسی کسان کی موت کی صورت میں اس کے خاندان کو دو لاکھ روپئے کی رقم بھی مہیا کی جارہی تھی ۔ وزیر اعلیٰ نے بتاےا کہ ریاستی حکومت کی اسکیم کے تحت ریاست کے 72لاکھ کسان مستفید ہورہے تھے جب کہ مرکز کی اسکیم سے زیادہ سے زیادہ 21سے22لاکھ کسانوں کو فائدہ پہنچتا ۔ اب تک 47لاکھ کسانوں نے ریاستی حکومت کی اسکیم سے فائدہ اٹھانے کیلئے خود کو رجسٹرڈ کرایا ہے جب کہ دیگر دو لاکھ کسانوں نے دوارے سرکار کی اسکیم کے تحت اپلائی کیا ہے ۔
ظاہر ہے کہ ممتا بنرجی نے ایک قدم پیچھے ہٹ کر بی جے پی کی سیاسی چال بازیوں کو ناکام بنا دیا ہے ۔ اب مرکزی حکومت اور بی جے پی یہ الزام نہیں لگا سکتی کہ ممتا بنرجی کسان دشمن ہیں جب کہ حقیقت یہ ہے کہ مرکز کی کسان اسکیم کے تحت ریاست کے صرف ایک تہائی کسانوں کو ہی فائدہ ملے گا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔