اسد الدیں اویسی کے اچانک کلکتہ دورے پر سیاسی ہلچل

آج اسد الدین اویسی نے عباس الدین صدیقی سے آکر فرہ فرہ شریف میں ملاقات کی ،کہا جا رہا ہے اس سے سیاسی کھچڑی اور زیادہ پکنی شروع ہوگئی ہے یہ بھی سننے میں آیا ہے کہ مجلس اتحاد ا لمسلمین (میم )کے مقامی لیڈر ان کو بھی ان کی آمد کی کوئی خبر نہیں تھی۔اچانک اسد الدین اویسی علی الصبح کلکتہ ایئرپورٹ پرا ترے اور اس کے بعد میم کے رہنماؤں کو علم ہوا کہ اسد الدین اویسی یہاں آ چکے ہیں ، ان کی گاڑی فرہ فرہ شریف کی طرف بڑھی تو نو بجے وہ لوگ یہاں پر ان کے ساتھ ہو لئے ۔یہ بھی سنا جا رہا ہے کہ رات کوفرہ فرہ شریف میں اس دن صدیقہ سکائپ یا فیس بک پر میٹنگ ہورہی تھی لیکن وہ اچانک کیوں کر یہاں آ گئے اس سے سیاسی ہلچل بہت زیادہ تیز ہو گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق وہ ایک سو اسمبلی حلقہ میں امیدوار وں کو پارٹی کی طرف سے کھڑا کریں گے۔اب تک خبر یہ تھی کہ اردو بولنے والے مسلمان میم کے چنائو نشان پر نشانہ سادھے ہوئے ہیں لیکن اب بنگال کے بنگالی جو مسلمان ووٹر ہیں ان کے ساتھ ، وہ اپنی پارٹی میںاردو بولنے والے اور بنگلہ بولنے والے مسلمان اگر ایک چھت کے تلے آگئے ۔عباس زیدی کے ساتھ مل کر ایک روڈ شو زبردست طور پر ہو سکتا ہے۔ سیاسی مبصرین اس کو بہت بڑی نگاہ سے دیکھ رہے ہیں مجھے بھی کہا جا رہا ہے کہ اسمبلی حلقے میں ایسا ہونے والا ہے۔ اس پرکہا جا رہا ہے کہ جب وہ وہاں کے الیکشن میں اپنے امیدواروں کو کھڑا کیا تھا تبھی انہوں نے کہا تھا کہ اب میری نگاہ بنگال کی طرف ہے اور میں مالدہ جاؤں گا مرشدآباد جاؤں گا اور بھی کئی اضلاع میں ان کی نگاہیں ہیں۔ ان کییہاں آمدپر زبردست طور پر انگلیاں اٹھائی جارہی ہے اور یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ دونوںپارٹی اقلیتی ووٹ کو توڑنے کا کام کر سکتے ہیں۔فرہ فرہ شریف کی میٹنگ میں جب وہ آئے تھے تو سب سے پہلے انہوں نے پیرزادہ کے مزاروں کی زیارت کی ،وہاں پر مصروف اسد الدین اویسی کے علاوہ اور دیگر نوشاد صدیقی موجود تھے اس کے علاوہ میم کے پانچ لیڈران بھی موجود تھے اور ان سے بھی کہیں زیادہ ان کے خاندان کے کئی لوگ دوسرے لیڈر ان سے ملاقات کریں گے لیکن اس میٹنگ میں کیا ہوا ہے خفیہ طور پر کیا بات ہوئی ہے ابھی تک کھل کر سامنے نہیں آیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔