انسانی اخوت کا مظاہرہ۔مسلم کانسٹیبل نے بیمار ضعیف خاتون کو پیٹھ پربٹھا کر 6کیلومیٹر پیدل چل کر اسپتال پہنچایا

 حیدرآباد، 24/ دسمبر : ایک انسانی اخوت کے مظاہرہ میں ایک مسلم کانسٹیبل نے اے پی کے تروملا ہلز کی مشہور مندرجانے کے دوران بیمار ہوئی ضعیف خاتون کو اپنی پیٹھ پر بٹھا کر تقریبا6کیلومیٹر تک پیدل چلتے ہوئے اس کوچتورضلع کے راجم پیٹ کے قریب واقع اسپتال میں داخل کروایا۔اطلاعات کے مطابق 58سالہ شردھالو ناگیشورماں، لارڈ وینکٹیشورا سوامی کے درشن کے لئے انامایامارگم کی سمت پیدل چل رہی تھی تاہم راستہ میں ہی وہ بی پی کے زیادہ ہونے کی وجہ سے بے ہوش ہوکر گرگئی،یہ خاتون مدد کی منتظر تھی کہ اسپیشل پولیس پارٹی سے تعلق رکھنے والا مسلم کانسٹیبل جس کی شناخت شیخ ارشد کے طورپر کی گئی ہے،وہاں پہنچا۔ارشد اس پہاڑی پر ڈیوٹی کررہا تھا۔اس ضعیف خاتون کو اونچائی پرپہنچانے کیلئے کسی بھی قسم کے دوسرے ٹرانسپورٹ ذرائع نہ ہونے پر ارشد نے اس ضعیف بیمار خاتون کو اپنی پیٹھ پربٹھالیا اور 6کیلومیٹر پر پیدل چلتے ہوئے اس کو راجم پیٹ کے پرائیویٹ اسپتال میں داخل کروایا۔ اس خاتون کو اپنی بیٹھ پر بٹھا کر لے جانے والے کانسٹیبل کی تصاویر اس راستہ سے گذرنے والوں نے لیتے ہوئے اس کو سوشیل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمس پر پوسٹ کردیا۔ان تصاویر میں دکھایاگیا ہے کہ یہ کانسٹیبل ضعیف خاتون کو پہاڑی راستوں سے کافی احتیاط کے ساتھ اپنی پیٹھ پر سوار کرتے ہوئے لے جارہا ہے۔کانسٹیبل کے اس قدم کی ڈی جی پی گوتم سوانگ نے ستائش کی ہے۔انہوں نے کہاکہ کانسٹیبل کا یہ قدم اپنے فرض کے تئین جذبہ پیداکرنے والا ہے۔(یواین آئی)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔